جو لوگ سونے سے پہلے

رات کی تاریکی میں بہت سی برائیاں اور مصائب رونما ہوتے ہیں اسی لئے اللہ تعالیٰ نے ہمیں رات کی تاریکی سے پناہ مانگنے کی تعلیم دی ہے جیسا کہ قرآن پاک میں ارشاد ہے ومن شرغاسق اذا وقب اور میں صبح کے رب کی پناہ مانگتا ہوں تاریک رات کے شر سے جب اس کی تاریکی پھیل جائے اور رسول اللہ ﷺ نے فرمایا سورج غروب ہوتے وقت اپنے بچوں اور جانوروں کو باہر نہ چھوڑیں اس لئے کہ سورج غروب ہوتے وقت سے عشاء کا اندھیرا چھانے تک شیطان گھومتے پھرتے ہیں یاد رہے کہ سورج کا غر وب ہونا رات کی دلیل ہے رات ایک طرف تھکے ہارے کے لئے پر سکون نیند کا ذریعہ ہے تو دوسری طرف اس میں شیاطین اور شریروں کی چلت پھرت تیز ہوجاتی ہے اسی لئے انسان کو رات کے وقت سونے سے پہلے بہت سے ایسے کام بتائے ہیں جن کا خیال رکھنابہت ضروری ہے

اگریہ انسان رات کو یہ کام کئے بغیر ہی سو جائے تو اس کو سخت نقصان کا سامناہ وسکتا ہے ۔یادرہے کہ نیند زندگی کی ایک اہم ترین ضرورت ہے اللہ کی ایک نشانی ہے اور ایک بڑی نعمت ہے اللہ نے اپنے بندوں پر اس نعمت کا احسان جتلاتے ہوئے فرمایا رات اور دن میں تمہارا نیند کرنا اور تمہارا اس کا فضل یعنی روزی تلاش کرنا بھی اس کی نشانیوں میں سے ہے جو لوگ کان لگا کر سننے کے عادی ہیں ان کے لئے اس میں بہت سی نشانیاں ہیں اللہ کے پیارے حبیب ﷺ نے رات کو سونے سے پہلے کے آداب بتائے ہیں تا کہ یہ انسان کسی بھی قسم کے جانی نقصان سے بچ پائے۔حضرت ابو برزہ اسلمی ؓ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ عشاء سے قبل سونے کو اور عشاء کے بعد گفتگو کرنے کو ناپسند کرتے تھے رسول اللہ ﷺ نے فرمایا جس کے ہاتھ میں گوشت یا چربی کی مہک یا اس کا اثر موجود ہو اور اسے دھوئے بغیر سو گیا پھر اسے کوئی مصیبت پہنچی تو وہ اپنے آپ کو ملامت کرے مطلب یہ کہ اگر آپ نے سونے سے پہلے کھانے میں گوشت کا سالن یا پھر چربی والا کھانا کھایا ہے

تو ایسی صورت میں ہاتھ دھو کر سونا چاہئے کیونکہ چربی یا گوشت کی مہک پر کسی بھی موذی جانور کا نقصان پہنچنے کا خطرہ ہے لہذا بہتریہ ہے کہ ہاتھ دھو کر سوئے اور سب سے بہتر عمل یہ ہے کہ سونے سے پہلے وضو کرلیا جائے جیسا کہ ایک روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا جب تم اپنے بستر پرآؤ تو وضو کر لو جیسے نماز کے لئے وضو کیاجاتا ہے مقصود یہ کہ سوتے وقت باوضو رہنا سنت ہے اور باوضو سونے کےفوائد کے بارے میں یہ بھی بیان کی گیا ہے کہ باوضو سونے سے انسان ڈراؤنے خواب اور شیطان کے کھلواڑ سے دور رہتا ہے اگر اس رات اس کی موت ہوجائے تو طہارت کی حالت میں موت ہوگی اگر کوئی اچھا خواب دیکھے تو وہ سچا ہوسکتا ہے اسی طرح سے روایات میں یہ بھی آیا ہے کہ سونے سے قبل بسم اللہ کہہ کر تین بار بستر کو اچھی طرح جھاڑ لینا چاہئے جیسا کہ ارشاد ہے جو اپنے بستر سے اٹھ جائے پھر دوبار ہ سونے کے لئے آئے تو دوبارہ اس کو جھاڑ لے کیونکہ معلوم نہیں کہ اس کے جانے کے بعد وہاں کیا کچھ آیا ہے ۔یادرہے کہ احادیث میں یہ تاکید بھی ملتی ہے کہ سونے سے پہلے آگ اور چراغ بجھا دیں جیسا کہ حضرت جابر بن عبداللہ ؓ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا رات میں جب تم سونے جاؤ تو چراغ بجھا دو اور دروازے بند کردو اور حضرت عبداللہ ابن عمر ؓ کہتے ہیں کہ نبی کریم ﷺ نے فرمایا سو تے وقت اپنے گھروں میں آگ کو جلتے ہوئے نہ چھوڑو ایک اور روایت میں ہے کہ چراغ بجھا دو کیونکہ بسا اوقات چوہا چراغ کی بتی کو بھڑکا کر گھر والوں کو جلا ڈالتا ہے۔اللہ ہم سب کا حامی و ناصر ہو